جامعہ مسعودیہ نورالعلوم میں علوم میں منایا گیا جشن آزادی

<h1 style='text-align: right; font-family:Jameel,Tahoma;direction: rtl;font-weight:normal;'>جامعہ مسعودیہ نورالعلوم میں علوم میں منایا گیا جشن آزادی</h1>

بہرائچ:جامعہ مسعودیہ نورالعلوم بہرائچ کے حال میں۷۱ ویں جشن آزادی کی  تقریب جامعہ کے مولانا مفتی  ذکراللہ قاسمی کی صدارت میں ہوئی۔ اس  تقریب کو خطاب کرتے ہوئے جامعہ نورالعلوم کے ناظم تعلیمات مولانا قاری زبیر احمد قاسمی نے ۷۱ وے جشن آزادی کے موقع پر اہل وطن کو دلی مبارکباد پیش کرتے ہوئے نیک خواہشات کا اظہار کیا اور کہا کہ ہمیں اس ملک سے محبت ہے۔ اس ملک کی بقا کیلئے اپنے خون کا آخری قطرہ دینے سے گریز نہیں  کریں گے۔ آج ہم جشن آزادی ضرور منا رہے ہیں لیکن ہمارے دل غم زدہ ہیں۔ کیونکہ اقلیتوں خاص طور پر مسلمانوں کے ساتھ انصاف کا معاملہ نہیں کیا جا رہا ہے۔ موجودہ یوپی حکومت کے ۱۵ اگست کے متعلق حکم نامہ جس میں بالخصوص مدارس اسلامیہ کو خطاب کر کے کہا گیا ہیکہ وہ یوم آزادی کے موقع پر پروگرام کریں اور جشن آزادی منائیں اگرچہ یہ حکم نامہ عام ہونا چاہئے مدرسو کے ساتھ تمام اسکولوں اور سرکاری دفتروں کے لیے یہ حکم نامہ جانا چاہئے تھا صرف مدرسوں کو اس حکم نامہ جاری کرنا حکومت کی کھلی بدنیتی ہے جس کی ہم مخالفت کرتے ہیں۔ جبکہ مدارس ہی سے آزادی کا نعرہ بلند ہوا اور اہل مدارس نے جو قربانیاں پیش کی ہیں وہ آب زر سے لکھے جانے کے قابل ہے۔

تقریب کو خطاب کرتے ہوئے مولانا محمد  عنایت اللہ قاسمی نے اپنے عنوانات میں کہا کہ ۱۵ اگست جس کو یوم آزادی سے تعبیر کیا جاتا ہے یہ دن ہندوستان کی آزادی تاریخی اور نہایت ہی اہمیت کا حامل دن ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی آزادی کے لئے ہمارے اسلاف، اکابرین، خاص طور پر جامعہ ہذا کے دو جا نثار بیٹے مجاہد آزادی مولانا محمد سلامت اللہ بیگ اور مولانا کلیم اللہ نوری نے قید کی تکلیفوں کو برداشت کیا۔ اس موقع پر  ماہنامہ نورالعلوم  کے ایڈیٹر اور جامعہ کے استاد مولانا مفتی حارث عبدالرحیم فاروقی نے اپنے عنوانات میں وطن پر مر مٹنے والوں اور مجاہدین کے کارناموں کا ذکر کیا اور کہا کہ یہ ہمارے لئے بڑی خوشی کی بات ہے کہ ہمارے اسلاف کی قربانیاں بیکار نہیں گئی۔

اس موقع پر جامعہ کے طلبا نے اپنا پروگرام پیش کیا تقریب کا آغاز متعلم عطاء اللہ،قاری ضیاء الحق،مولانا قاری اشرف قاسمی کی تلاوت،ذیشان سعید محمد اسامہ ،محمد عیان کی نظم،مقصو د احمد کی نعت اور مبین احمد،محمد ریحان، محمد زید کے ترانہ ہندی سے ہوا۔نظامت کے فرائض مولانا امیر احمد قاسمی نے انجام دئے۔پروگرام کے اختتا م پر طلبا نے ہندوستان اور یوم آزادی زندہ باد کے فلک شغاف نعرے لگائے۔اس موقع پر جامعہ کے معاون مہتمم حافظ محمد سعید اختر،نائب مہتمم مولانا نذرمحمد قاسمی، مفتی اکرام الدین قاسمی،مفتی اشتیاق احمد قاسمی، قاری عبداللطیف،قاری محمد جو اد،حافظ اشفاق احمد بیگ، مولانا ابوالکلام قاسمی، مولانا محمد کلیم ندوی، مولانا محمد ہارون قاسمی،مولانا جسیم احمد قاسمی،قاری محمد احسان، قاری امیر الحسن،قاری قمرالدین،ماسٹر عبدالقیوم، حافظ محفوظ احمد،مولوی حیات اللہ کے علاوہ جامعہ کے تمام اساتذہ،ملازمین او رطلبا موجود تھے۔جامعہ کے صدر المدرسین مولانا مفتی ذکر اللہ قاسمی کی دعا پر تقریب اختتام پذیر ہوئی۔